Immagine & Poesia, Lidia Chiarelli, Muhammad Azram

“Times Square” poem and image by Lidia Chiarelli, translation in Urdu by Muhammad Azram

Times Square _

ٹائمز اسکوائر

 

روشنیاں کھول دو

ایک بار پھر سے

ٹائم اسکوائر کی روشنیاں کھول دو

 

میرے لیے آج روشنیاں کھول دو

آج نیو یارک میں

میری آخری رات ہے

 

گلیوں کی گرم ہوا

ایک نرم شال کی طرح

مجھے لپیٹ لیتی ہے

 

جیسے ہوا کی چرخیاں

چلتی رہتی ہے

اور رقص کو روکتی نہیں

 

میری آنکھوں

کو ایک بارپھر سے

اپنے میٹھے نشے میں کھو جانے د

TIMES SQUARE

 

Switch on

switch on once more

lights at Times Square.

 

Switch on for me

in my last night in New York.

 

The hot air in the streets is a gentle cloak

that wraps me up.

 

Like windmills moving and moving

don’t stop your dance.

 

Let my eyes get lost

again

into your

whirl

so sweet

so intoxicating.

Advertisements